آسام میں یو سی سی کا نفاذ بی جے پی حکومت کے خاتمے کا باعث بنے گا: اجمل

author img

By ETV Bharat Urdu Team

Published : Feb 24, 2024, 7:03 PM IST

اے آئی یو ڈی ایف کے صدر اور ایم پی بدرالدین اجمل

Badruddin Ajmal اے آئی یو ڈی ایف کے صدر اور ایم پی بدرالدین اجمل نے کہا کہ آسام مسلم میرج اینڈ ڈیوورس رجسٹریشن ایکٹ کی منسوخی یونیفارم سول کوڈ کی طرف پہلا قدم ہے۔

گوہاٹی: آل انڈیا یونائیٹڈ ڈیموکریٹک فرنٹ کے صدر بدرالدین اجمل نے ہفتہ کے روز دعویٰ کیا کہ آسام مسلم میرج اینڈ طلاق رجسٹریشن ایکٹ 1935 کی منسوخی آسام میں یکساں سول کوڈ لانے کی طرف پہلا قدم ہے، لیکن اس سے بی جے پی حکومت کا تابوت کھل جائے گا۔ سڑک میں آخری کیل ثابت ہوگا۔ آسام کی کابینہ نے جمعہ کی رات اس قانون کو منسوخ کرنے کی منظوری دی۔

اجمل نے یہاں ایک تقریب کے موقع پر نامہ نگاروں کو بتایا، "وہ مسلمانوں کو اکسانے اور ووٹروں کو اپنے حق میں پولرائز کرنے کی کوشش کر رہے ہیں۔" دھوبری کے ایم پی اجمل نے کہا کہ ایکٹ کو منسوخ کرنا بی جے پی حکومت کا ریاست میں یو سی سی کو متعارف کرانے کی طرف پہلا قدم ہے، لیکن یہ آسام میں بی جے پی حکومت کے خاتمے کا باعث بنے گا۔ انہوں نے کہا، 'ہم ایکٹ کو منسوخ کرنے کی مخالفت ضرور کریں گے لیکن انتخابات کے بعد۔ ہم فی الحال خاموش رہیں گے۔

قانون کی تنسیخ کے بعد مسلم شادیاں کرانے والے قاضیوں کو دیے جانے والے دو لاکھ روپے کے یک وقتی معاوضے کا حوالہ دیتے ہوئے اجمل نے کہا کہ قاضی بھکاری نہیں ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ 'میڈیا کے ذریعے میں ان سے درخواست کرتا ہوں کہ وہ حکومت سے ایک پیسہ بھی نہ لیں۔'

یہ بھی پڑھیں: آسام: بچوں کی شادی اور مسلم شادی وطلاق رجسٹریشن ایکٹ منسوخ


لوک سبھا انتخابات کے لیے اپوزیشن اتحاد 'انڈیا' کے بارے میں، اے آئی یو ڈی ایف کے سربراہ اجمل نے کہا کہ یہ وزیر اعظم نریندر مودی، بھارتیہ جنتا پارٹی اور قومی جمہوری اتحاد کو سخت چیلنج پیش کرے گا۔ انہوں نے کہا کہ 'انتخابات میں تین سیٹیں جیتنے کے بعد ہماری پارٹی اتحاد کی حمایت کرے گی۔' آسام کے وزیر اعلیٰ ہمانتا بسوا سرما نے کہا کہ یہ آزادی سے پہلے کا قانون بچپن کی شادی کو ختم کرنے کے لیے منسوخ کر دیا گیا ہے۔ سرما نے پوسٹ کیا۔

ETV Bharat Logo

Copyright © 2024 Ushodaya Enterprises Pvt. Ltd., All Rights Reserved.